لکھیں اور 40404 پر سینڈ کریں۔ پھر اپنا نام لکھ کر 40404 پر سینڈ کریںFollow         Pak488 میں جا کر Write         Message     اردو ادب کے تمام شعرائے کرام کی شاعری کے ایس ایم ایس اپنے موبائل پر مفت حاصل کرنے کے لئے
جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی






Ab Ke Tajdeed e Wafa Ka Nahin Imkan Janaa..





اب کے تجدید وفا کا نہیں امکاں جاناں 
یاد کیا تجھ کو دلائیں ترا پیماں جاناں 

یونہی موسم کی ادا دیکھ کے یاد آیا ہے 
کس قدر جلد بدل جاتے ہیں انساں جاناں 

زندگی تیری عطا تھی سو ترے نام کی ہے 
ہم نے جیسے بھی بسر کی ترا احساں جاناں 

دل یہ کہتا ہے کہ شاید ہے فسردہ تو بھی 
دل کی کیا بات کریں دل تو ہے ناداں جاناں 

اول اول کی محبت کے نشے یاد تو کر 
بے پیے بھی ترا چہرہ تھا گلستاں جاناں
 
آخر آخر تو یہ عالم ہے کہ اب ہوش نہیں 
رگ مینا سلگ اٹھی کہ رگ جاں جاناں 

مدتوں سے یہی عالم نہ توقع نہ امید 
دل پکارے ہی چلا جاتا ہے جاناں جاناں 

ہم بھی کیا سادہ تھے ہم نے بھی سمجھ رکھا تھا 
غم دوراں سے جدا ہے غم جاناں جاناں 

اب کے کچھ ایسی سجی محفل یاراں جاناں
سر بہ زانو ہے کوئی سر بہ گریباں جاناں 

ہر کوئی اپنی ہی آواز سے کانپ اٹھتا ہے 
ہر کوئی اپنے ہی سائے سے ہراساں جاناں
 
جس کو دیکھو وہی زنجیر بہ پا لگتا ہے 
شہر کا شہر ہوا داخل زنداں جاناں
 
اب ترا ذکر بھی شاید ہی غزل میں آئے 
اور سے اور ہوئے درد کے عنواں جاناں 

ہم کہ روٹھی ہوئی رت کو بھی منا لیتے تھے 
ہم نے دیکھا ہی نہ تھا موسم ہجراں جاناں 

ہوش آیا تو سبھی خواب تھے ریزہ ریزہ 
جیسے اڑتے ہوئے اوراق پریشاں جاناں

احمد فراز
Relevent Best Poetry
Charagh Saray Bujhay Ho Gai ...

Piyar Karne Walon Ka Bus Yah...

Apni Marzi Sey Kahan Apne Sa...

Waqt SE Pocha Raha Hai Koi.....

Main Kal Tanha Tha Khalqat S...

ab Talak Apni Tapish Aap Jal...



جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی

Powered By: eVision Development Solutions Visit: www.evdsp.com