لکھیں اور 40404 پر سینڈ کریں۔ پھر اپنا نام لکھ کر 40404 پر سینڈ کریںFollow         Pak488 میں جا کر Write         Message     اردو ادب کے تمام شعرائے کرام کی شاعری کے ایس ایم ایس اپنے موبائل پر مفت حاصل کرنے کے لئے
جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی






Khuli Jo Aankh to Woh Tha, Na Wo Zamana Tha..





کُھلی جو آنکھ ، تو وہ تھا، نہ وہ زمانہ تھا
دہکتی آگ تھی، تنہائی تھی، فسانہ تھا

غموں نے بانٹ لیا تھا مجھے یوں آپس میں
کہ جیسے میں کوئی لُوٹا ہُوا خزانہ تھا​

یہ کیا کہ چند ہی قدموں پہ تھک کے بیٹھ گئے
تُمھیں تو ساتھ مِرا دُور تک نِبھانا تھا

مجھے، جو میرے لہو میں ڈبو کے گزُرا ہے
وہ کوئی غیر نہیں، یار اِک پُرانا تھا

خود اپنے ہاتھ سے شہزاد اُس کو کاٹ دِیا
کہ جس درخت کی ٹہنی پہ آشیانہ تھا

فرحت شہزاد​
Khuli Jo Aankh To Wo Tha Na Wo Zamana Tha 
Dahekti Aag Thi Tanhayi Thi Fasana Tha. 

Gumon Ne Baant Liya Tha Mujhe Yuon Aapes Main 
Ki Jaise Main Koi Loota Hua Khazana Tha. 

Ye Kya Ki Chand He Qadmon Pe Thak Kay  Baith Gaye 
Tumeh To Saath Mera Door Tek Nibhana Tha. 

Mujhe Jo Mere Lahoo Main Dabo Kay Guzra Hai 
Woh Koi Ghair Nahin Yaar Ek Purana Tha. 

Khud Apne Haath Sey Shehzad Usko Kaat Diya 
Ki Jis  Darkht Ki Tehni Pe Yeh Aashiyaana Tha.

Farhat Shehzad
Relevent Best Poetry
Bhooli Hoi Sada Hon Mujhe Ya...

Tanhaiyon Ke Dasht Mein Aksa...

Mian Raakh Hota Gaya Aur Cha...

Dil Ko Dard e Aashna Kiya Tu...

Dekh kar Tujh Ko Mere Dil ka...

Apna Aap Tamasha Kar Ke Dekh...



جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی

Powered By: eVision Development Solutions Visit: www.evdsp.com