لکھیں اور 40404 پر سینڈ کریں۔ پھر اپنا نام لکھ کر 40404 پر سینڈ کریںFollow         Pak488 میں جا کر Write         Message     اردو ادب کے تمام شعرائے کرام کی شاعری کے ایس ایم ایس اپنے موبائل پر مفت حاصل کرنے کے لئے
جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی






Kiya Kahye K Ab Uss Ki Sada Tak Nahin Aati






کیا کہیے کہ اب اس کی صدا تک نہیں آتی 
اونچی ہوں فصیلیں تو ہوا تک نہیں آتی 

شاید ہی کوئی آسکے اس موڑ سے آگے 
اس موڑ سے آگے تو قضا تک نہیں آتی 

وہ گل نہ رہے نکبتِ گُل خاک ملے گی 
یہ سوچ کے گلشن میں صبا تک نہیں آتی 

اس شورِ تلاطم میں کوئی کس کو پکارے 
کانوں میں یہاں اپنی صدا تک نہیں آتی 

خوددار ہوں کیوں آؤں درِ ابلِ کرم پر 
کھیتی کبھی خود چل کے گھٹا تک نہیں آتی 

اس دشت میں قدموں کے نشاں ڈھونڈ رہے ہو 
پیڑوں سے جہاں چھن کےضیا تک نہیں آتی 

یا جاتے ہوئے مجھ سے لپٹ جاتی تھیں شاخیں 
یا میرے بلانے سے صبا تک نہیں آتی 


چھپ چھپ کے سدا جھانکتی ہیں خلوتِ گل میں 
مہتاب کی کرنوں کو حیا تک نہیں آتی

یہ کون بتائے عدم آباد ہے کیسا 
ٹوٹی ہوئی قبروں سےصدا تک نہیں آتی 

بہتر ہے پلٹ جاؤ سیہ خانۂ غم سے 
اس سرد گُپھا میں تو ہوا تک نہیں آتی

Relevent Best Poetry
Muhabbat Kiya hai Dil Ka Dar...

Dayar e Dil Ki Raat Mein Cha...

Apni Tasveer Laga Di Hai Ter...

Hum Un Sey Agar Mil baithay ...

Usay Kehna Bicharnay Sey Muh...

Hum Bhi Shair Thay Kabhi Jan...



جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی

Powered By: eVision Development Solutions Visit: www.evdsp.com