لکھیں اور 40404 پر سینڈ کریں۔ پھر اپنا نام لکھ کر 40404 پر سینڈ کریںFollow         Pak488 میں جا کر Write         Message     اردو ادب کے تمام شعرائے کرام کی شاعری کے ایس ایم ایس اپنے موبائل پر مفت حاصل کرنے کے لئے






Mard har Bazi Dimagh Se Khelta hai..





مرد ہر بازی دماغ سے کھیلتا ہے کبھی کبھار کوئی ایک بازی ایسی ہوتی
 ہے جسے وہ دل سے کھیلتا ہے ۔ اورجس بازی کو وہ دل سے کھیلتا ہے
 اس میں مات کبھی نہیں کھاتا کیونکہ وہ بازی انا کی بازی ہوتی ہے ۔
عورت ہر بازی دل سے کھیلتی ہے مگر کبھی کبھار کوئی ایک بازی ایسی 
ہوتی ہے جسے وہ دماغ سے کھیلتی ہے اور اس وقت کم ازکم اس بازی میں
 کوئی اس کے سامنے کھڑا رہ سکتا ہے نہ اسے چت کر سکتا ہے اور وہ بازی 
بقا کی بازی ہوتی ہے ۔

اقتباس عمیرہ احمد کی کتاب '' مات ہونے تک '' سے
Relevent Best Poetry
Shukar Ada Na Karna Bhi Aik ...

Zindagi mein Buht Sari Batain

Duniya Mein Kuch Rishte Aise...

Shukar Na Karna Bhi Aik Bema...

Hamare Masle Aur Hamari Pres...

Muhabbat Kisi Tabqay ki Mera...



Powered By: eVision Development Solutions Visit: www.evdsp.com