لکھیں اور 40404 پر سینڈ کریں۔ پھر اپنا نام لکھ کر 40404 پر سینڈ کریںFollow         Pak488 میں جا کر Write         Message     اردو ادب کے تمام شعرائے کرام کی شاعری کے ایس ایم ایس اپنے موبائل پر مفت حاصل کرنے کے لئے






Ye Naam Mumkin Nahi Rahay Ga, Muqaam Mumkin Nahin Rahay Ga





یہ نام ممکن نہیں رہے گا،مقام ممکن نہیں رہے گا
غرور لہجے میں آ گیا تو کلام ممکن نہیں رہے گا

یہ برف موسم جو شہرِ جاں میں کُچھ اور لمحے ٹھہر گیا تو
لہو کا دل کی کسی گلی میں قیام ممکن نہیں رہے گا

تم اپنی سانسوں سے میری سانسیں الگ تو کرنے لگے ہو لیکن
جو کام آساں سمجھ رہے ہو وہ کام ممکن نہیں رہے گا

وفا کا کاغذ تو بھیگ جائے گا بد گُمانی کی بارشوں میں
خطوں کی باتیں تو خواب ہوں گی پیام ممکن نہیں رہے گا

میں جانتی ہوں مجھے یقیں ہے اگر کبھی تُو مجھے بھُلا دے
تو تیری آنکھوں میں روشنی کا قیام ممکن نہیں رہے گا

یہ ہم محبّت میں لا تعلّق سے ہو رہے ہیں تو دیکھ لینا
دُعائیں تو خیر کون دے گا سلام ممکن نہیں رہے گا

نوشی گیلانی
Ye Naam Mumkin Nahi Rahay Ga, Muqaam Mumkin Nahin Rahay Ga
Gharoor Lehjay Mein Aa Gaya Tou Kalaam Mumkin Nahin Rahay Ga

Ye Barf Mausam Jo Sheher-e-Jaan Mein Kuch Aur Lamhay Theher Gaya Tou
Lahoo Ka Dil Ki Kisi Gali Mein Muqaam Mumkin Nahni Rahay Ga

Tum Apni Saanson Sey Meri Saansain Alag Tou Karnay Lagay Ho Lekin
Jo Kaam Aasaan Samajh Rahay Ho Wo Kaam Mumkin Nahi Rahay Ga

Wafaa Ka Kaaghaz Tou Bheeg Jaye Ga Badgumaani Ki Baarishon Mein
Khaton Ki Baatain Tou Khwaab Hon Gi Payaam Mumkin Nahin Rahay Ga

Mein Jaanti Hun Mujhe Yaqeen Hai Agar Kabhi TU Mujhe Bhula De
Tou Teri Aanhkon Mein Roshni Ka Qayyam Mumkin Nahin Rahay Ga

Ye Ham Mohabbat Mein La Ta146alluq Se Ho Rahay Hain Tou Dekh Laina
Duaaein Tou Khair Kon De Ga Salaam Mumkin Nahin Rahay Ga

Poetess: Noshi Gilani
Relevent Best Poetry
Khuda Ka Khas Tohfa Aur Inay...

Wo Ishq Jo Hum Se Rooth Gaya...

Pichle Saal ki Dairi Ka Aakh...

Dil Se Mat Rooth Mere Dekh M...

Inhi Khush Gumaniyon Mein Ka...

Sau Baar Chaman Mehka Sau Ba...



Powered By: eVision Development Solutions Visit: www.evdsp.com