لکھیں اور 40404 پر سینڈ کریں۔ پھر اپنا نام لکھ کر 40404 پر سینڈ کریںFollow         Pak488 میں جا کر Write         Message     اردو ادب کے تمام شعرائے کرام کی شاعری کے ایس ایم ایس اپنے موبائل پر مفت حاصل کرنے کے لئے
جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی






Haaye Woh Waqt e judai Kay Tumharay Aansu....





ہائے وہ وقت جدائی کے تمہارے آنسو
گِر کے دامن پہ بنے تھے جو سِتارے آنسو

لَعل و گُوہر کے خزانے ہیں یہ سارے آنسو
کوئی آنکھوں سے چُرا لے نہ تمہارے آنسو

اُن کی آنکھوں میں جو آئیں تو ستارے آنسو
میری آنکھوں میں اگر ہوں تو بِچارے آنسو

دامن صبر بھی ہاتھوں سے مِرے چھوٹ گیا
اب تو آ پہنچے ہیں پلکوں کے کِنارے آنسو

آپ لِلہ مری فکر نہ کیجئے ہرگز
آ گئے ہیں یوں ہی بس شوق کے مارے آنسو

دو گھڑی درد نے آنکھوں میں بھی رہنے نہ دیا
ہم تو سمجھے تھے بنیں گے یہ سہارے آنسو

تُو تو کہتا تھا نہ روئیں گے کبھی تیرے لئے
آج کیوں آ گئے پلکوں کے کنارے آنسو

آج تک ہم کو قَلق ہے اسی رُسوائی کا
بہہ گئے تھے جو بچھڑنے پہ ہمارے آنسو

میرے ٹھہرے ہوئے اَشکوں کی حقیقت سمجھو
کر رہے ہیں کسی طُوفاں کے اِشارے آنسو

آج اَشکوں پہ مِرے تم کو ہنسی آتی ہے
تم تو کہتے تھے کبھی ان کو سِتارے آنسو

اس قدر غم بھی نہ دے کُچھ نہ رہے پاس مِرے
ایسا لگتا ہے کہ بہہ جائیں گے سارے آنسو

دل کے جلنے کا اگر اب بھی یہ انداز رہا
پھر تو بن جائیں گے ایک دن یہ شرارے آنسو

تم کو رِم جھِم کا نظارہ جو لگا ہے اب تک
ہم نے جلتے ہوئے آنکھوں سے گزارے آنسو

میرے ہونٹوں کو تو جُنبش بھی نہ ہو گی لیکن
شِدّتِ غم سے جو گھبرا کے پُکارے آنسو

میری فریاد سنی ہے نہ وہ دل موم ہوا
یوں ہی بہہ بہہ کے مرے آج یہ ہارے آنسو

ان کو ناصرؔ کبھی آنکھوں سے نہ گرنے دینا
میری آنکھوں میں انہیں لگتے ہیں پیارے آنسو

حکیم ناصر
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Relevent Best Poetry
Kabhi Tu Ne Khud Bhi Socha, ...

Koi Khawab Dasht e Firaq Mei...

Kabhi wo Hath Na Aaya hawaon...

MItthi kheer Paka Muhammad...

Socha nahin Acha Bura Dekha ...

Mere Rog Ka Na Malaal kar, M...



جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی

Powered By: eVision Development Solutions Visit: www.evdsp.com